خوبانی کو خوراک کا حصہ بنائے اور صحت پایئے

خوبانی کے فوائد

خوبانی سرد پہاڑی

 علاقوں میں پیدا ہونے والا پھل ہے جو کہ ذائقے اور غذائیت سے بھر پور پھل ہے۔اس کو ذرد آلو بھی کہا جاتا ہے۔یہ پھل پوٹاشیم، فولاد، فائبر اور بیٹا کروٹین سے مالامال ہوتا ہے۔یہ پھل دو حالتوں میں پایا جاتا ہے خشک اور تازہ، طبی ماہرین کے مطابق دونوں حالتوں میں اس کا استعمال صحت کے لئے نہایت مفید ہے ۔

زیادہ تر پھلوں کی طرح، یہ وٹامنز اور معدنیات سے بھرپور ہے اور بے انتہا  صحت بخش ہے۔

خوبانی ان حیاتین اور معدنیات کا ایک اچھا ذریعہ ہے جن کی ہمارے جسم کو نشوونما کے لیے ضرورت ہوتی ہے۔ وٹامن اے، جسے سائنسدان ریٹینول بھی کہتے ہیں، صحت مند آنکھوں کے لیے بہت ضروری ہے۔ خاص طور پر، وٹامن اے وہ روغن بنانے میں مدد کرتا ہے جس کی ریٹینا کو مناسب طریقے سے کام کرنے کے لیے ضرورت ہوتی ہے۔ اس کے بغیر رات کے اندھے پن کا خطرہ ہوتا ہے۔ وٹامن اے آنکھوں میں نمی پیدا کرنے میں بھی مدد کرتا

ہے۔وٹامن اے مدافعتی نظام میں بھی اہم کردار ادا

 کرتا ہے یہ سوزش کو روکتا ہے۔

خوبانی وٹامن سی کا ایک اچھا ذریعہ بھی ہے جو کہ ان وٹامنز میں سے ایک ہے جو انسانی جسم پیدا نہیں کر سکتا۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اپنی خوراک میں کافی مقدار میں وٹامن سی استعمال کرنا چاہیے۔ وٹامن سی کے بہت سے کام ہوتے ہیں۔ یہ جسم کے دفاعی نظام کو بیکٹیریا اور  وائرس سے لڑنے میں مدد کرتا ہے اور جسم میں پاۓ جانے والے آوارہ ریڈکلز کو کنٹرول کرتا ہے جو جگر کو نقصان پہنچاتے ہیں۔ اس لیے خوبانی جگر کی صحت کے لیے بھی بہت مفید ہے۔

 

*فائبر  یا غذائی ریشہ*

ہر 35 گرام خوبانی میں 0.7 گرام فائبر پایا جاتا ہے۔غذائی ریشہ بہت اہم ہے کیونکہ یہ خون میں شکر کی سطح کو منظم کرنے میں مدد کرتا ہے۔ یہ ہاضمے میں بھی مدد کرتا ہے، جو قبض کو روکنے اور معدے کی مجموعی صحت کو بہتر کرنے میں مدد دیتا ہے۔

 خوبانی  پوٹاشیئم کا اہم ذریعہ ہے۔ پوٹاشیئم ایک الیکٹرولائٹ  ہے۔ ہمارے اعصاب اور   پٹھوں کو کام کرنے کے لیے اس کی ضرورت ہے۔ جسم کو غذائی اجزاء کو خلیوں میں منتقل کرنے اور خلیاتی فضلے کو ٹھکانے لگانے کے لیے بھی پوٹاشیم کی ضرورت ہوتی ہے۔ یہ دل کی دھڑکن کو باقاعدہ رکھنے میں مدد کرکے دل کی صحت میں بھی اپنا کردار ادا کرتا ہے۔ یہ بلڈ پریشر کو بڑھنے سے روکتا ہے اور فالج کے خطرے سے بھی بچاتا ہے۔

                    ماہرین کے مطابق تازہ اور خشک خوبانی دونوں ہی غذائیت سے مالا مال ہوتی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ کچھ ماہرین کی یہ رائے بھی ہے کہ خوبانی کو سکھا کر محفوظ کرنے سے اس کی غذائیت میں اضافہ ہو جاتا ہے۔

خشک خوبانی سے بہت سے طبی فوائد حاصل کیے جا سکتے ہیں لیکن اس کے لیے ضروری ہے کہ اس پھل کو باقاعدگی کے ساتھ استعمال کیا جائے۔

خشک خوبانی کے استعمال سے صحت پر بہت سے  مثبت نتائج ظاہر ہوتے ہیں، کیوں کہ اس میں بہت سے غذائی اجزاء پائے جاتے ہیں۔ تقریباً ایک سو گرام خشک خوبانی میں 241 کیلوریز، 5 گرام فیٹ، 4 گرام پروٹین، 3 گرام فائبر، 63 گرام کاربو ہائڈریٹس، 1160 ملی گرام پوٹاشیم، 3 ملی گرام آئرن، 55 ملی گرام کیلشیم، 2 مائیکرو گرام سیلینیم، 180 مائیکرو گرام وٹامن اے، 1 ملی گرام وٹامن سی، جب کہ 10 مائیکرو گرام فولیئیٹ پایا جاتا ہے۔

 

طبی ماہرین کے مطابق تازہ اور خشک خوبانی دونوں ہی غذائیت سے مالا مال ہوتی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ کچھ ماہرین کی یہ رائے بھی ہے کہ خوبانی کو سکھا کر محفوظ کرنے سے اس کی غذائیت میں اضافہ ہو جاتا ہے۔

***خشک خوبانی کے فوائد***

💫وزن میں کم کرنے میں مددگار💫

ایسے لوگ جو موٹاپے کا شکار ہوں، ان کے لیے خوبانی نہایت مفید ثابت ہو سکتی ہےکیوں کہ اس پھل میں ایسی خصوصیات پائی جاتی ہیں جو وزن میں کمی لانے کے لیے نہایت مددگار ثابت ہوتی ہیں۔

خشک خوبانی میں فائبر کافی مقدار میں پایا جاتا ہے جو زیادہ دیر تک بھوک نہیں لگنے دیتا، جس کی وجہ سے وزن میں کمی آنا شروع ہوتی ہے۔ وزن میں کمی لانے کے لیے خشک خوبانی کو استعمال کرنے والے افراد کو چاہیئے کہ اسے متوازن مقدار میں استعمال کریں، کیوں کہ اس میں کیلوریز کافی مقدار میں پائی جاتی ہیں۔

💫جِلدی امراض سے چھٹکارا💫

خوبانی وٹامن بی، وٹامن

 اے، وٹامن سی اور لائکوپین کا بہترین ذریعہ ہے جو اسے ہماری جلد کی صحت کے لیے بے حد  فائدہ مند بناتی ہے۔

خوبانی جلد کی متعدد بیماریوں کے علاج میں بھی مدد کرتی ہے جن میں ایکزیما، ، خارش اور دیگر پریشان کن حالات شامل ہیں۔ اس کی اینٹی آکسیڈنٹ خاصیت قبل از وقت عمر بڑھنے کی علامات کو روکنے میں مدد کرتی ہیں۔

عام طور پر خون کی مختلف بیماریوں کی وجہ سے جِلد کے مختلف مسائل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ خون کی گرمی کی وجہ سے جِلد پر پھوڑے پھنسیاں نمودار ہو سکتے ہیں۔ ان سے نجات پانے کے لیے رات کو 100 گرام خشک خوبانی اور 30 گرام عناب کو 300 ملی لیٹر پانی میں بھگو کر رکھ دیں، صبخ اٹھ کر خوبانی اور عناب کو پانی میں اچھی طرح مکس کر  لیں۔

اس پانی میں حسبِ ضرورت مصری ملا کر پی لیں۔ چند دن تک اس نسخے پر عمل کرنے سے مثبت نتائج آنا شروع ہو جائیں گے۔

 

💫خون کی کمی کاخاتمہ💫

خون کی کمی کی علامات سے چھٹکارا پانے کے لیے آئرن نہایت اہم کردار ادا کرتا ہے، چوں کہ خشک خوبانی میں آئرن وافر مقدار میں پایا جاتا ہے، اس لیے خون کی کمی کی علامات سے نجات حاصل کرنے کے لیے خشک خوبانی ایک بہترین نعمت ہے۔ جسم میں آئرن کی سطح متوازن ہونے سے خون کے سرخ ذرات کی سطح میں بھی بہتری آتی ہے۔

💫پیٹ کے کیڑوں سے نجات💫

بچوں کو زیادہ تر پیٹ کے کیڑوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے، جب کہ بعض اوقات بڑوں کو بھی اس مسئلے کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ پیٹ کے کیڑوں سے چھٹکارا پانے کے لیے ہر روز پچاس گرام خشک خوبانی کے ساتھ سبز چائے نہار منہ استعمال کریں۔ کچھ دن میں کیڑے ختم ہونا شروع ہو جائیں گے۔

 

💫آنکھوں کی صحت میں بہتری💫

خشک خوبانی کا شمار ان غذاؤں میں کیا جاتا ہے جو آنکھوں کی صحت کو بہتر بنانے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ تازہ خوبانی کا استعمال بھی آنکھوں کے لیے بہت مفید ہے۔ آنکھوں کی صحت کو بہتر بنانے اور برقرار رکھنے کے لیے آپ ہر روز مٹھی بھر خوبانی استعمال کر سکتے ہیں۔

 

💫ذیابیطس کے مرض میں مفید💫

خوبانی میں ایسے غذائی اجزاء پائے جاتے ہیں جو خون میں گلوکوز کی مقدار ضرورت سے زیادہ نہیں ہونے دیتے۔ خشک خوبانی سے حاصل ہونے والی فرکٹوز کی معتدل مقدار گلوکوز کی سطح کو برقرار رکھنے میں بھی مدد فراہم کر سکتی ہے۔ اس کے علاوہ خشک خوبانی کے استعمال سے انسولین پر بھی مثبت اثرات ظاہر ہوۓ ہیں۔

💫ہائی بلڈ پریشر میں کمی💫

خشک خوبانی میں پوٹاشیم وافر مقدار میں پائی جاتی ہے جو بلڈ پریشر کی سطح کو متوازن رکھتی ہے۔ بلڈ پریشر کی سطح کو متوازن رکھنے کے لیے 259 ملی گرام پوٹاشیم کافی ہوتی ہے جو کہ 100 گرام خشک خوبانی سے حاصل کی جا سکتی ہے۔

💫قبض کی علامات سے چھٹکارا💫

چوں کہ خشک خوبانی میں فائبر وافر مقدار میں پایا جاتا ہے، اس لیے یہ قبض کی علامات کو ختم کرنے میں کردار ادا کر سکتی ہے۔ اس پھل کو استعمال کرنے سے آنتیں بہتر طریقے سے کام کرنا شروع کر دیتی ہیں۔ اس وجہ سے اس مرض سے  چھٹکارا پانے میں مدد ملتی ہے۔

 

💫ہڈیوں کی کثافت میں بہتری💫

خواتین میں ہڈیوں کی کثافت کی مقدار غیر متوازن ہونے سے ہڈیوں کے بھربھرے پن اور جوڑوں کے درد کے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔ خشک خوبانی میں بوران پایا جاتا ہے، جس کی وجہ سے ہڈیوں کی معدنی کثافت کو بہتر بنانے میں مدد ملتی ہے۔

 

💫اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرپور💫

خشک خوبانی میں بیٹا کیروٹین سمیت بہت سے اینٹی آکسیڈنٹس پائے جاتے ہیں جو دل کی بیماریوں اور ذیابیطس کے خطرات کو کم کرنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ یہ اینٹی آکسیڈنٹس جسم کو فری ریڈیکلز کی وجہ سے پہنچنے والے نقصان سے بچاتے ہیں اور سوزش کے خطرات بھی کم کرتے ہیں۔

 

💫حمل کے دوران مفید💫

 حاملہ خواتین کو زیادہ مقدار میں آئرن کی ضرورت ہوتی ہے تا کہ ان میں خون کی کمی واقع نہ ہو اور فولاد کی کمی وجہ سے ہونے والی جسمانی سوجن سے محفوظ رہیں ۔ اس کے علاوہ خشک خوبانی کے استعمال سے حاملہ خواتین میں ہاضمے کے نظام میں بھی بہتری آتی ہے۔

💫خوبانی میں پاۓ جانے والےغذائی اجزاء ☀️

  امریکی محکمہ زراعت کے قابل اعتماد ماخذ کے مطابق،35 گرام خوبانی میں درج ذیل غذائی اجزاء پاۓ جاتے ہیں: 

توانائی: 16.8 کیلوریز یا حرارے

 پروٹین: 0.49 گرام 

 چربی: 0.14 گرام  کاربوہائیڈریٹ: 3.89 گرام  فائبر: 0.7 گرام 

شکر: 3.23 گرام

 کیلشیم: 4.55 ملی گرام  آئرن: 0.14 ملی گرام میگنیشیم: 3.5 ملی گرام فاسفورس: 8.05 ملی گرام پوٹاشیم: 90.6 ملی گرام سوڈیم: 0.35 ملی گرام زنک: 0.07 ملی گرام 

تانبا: 0.03 ملی گرام 

سیلینیم: 0.04 مائیکروگرام (ایم سی جی) 

وٹامن سی: 3.5 ملی گرام تھامین: 0.01 ملی گرام رائبوفلاوین: 0.01 ملی گرام نیاسین: 0.21 ملی گرام وٹامن B-6: 0.02 ملی گرام وٹامن اے: 33.6 ایم سی جی بیٹا کیروٹین: 383 ایم سی جی وٹامن ای: 0.31 ملی گرام وٹامن K: 1.16 ایم سی جی

Comments

You must be logged in to post a comment.

About Author
Recent Articles
Nov 19, 2022, 5:42 PM Mousumi
Nov 19, 2022, 5:42 PM Kadiri Saliu
Nov 19, 2022, 5:41 PM ABDELHAQ AITALLA
Nov 19, 2022, 5:41 PM Moutaz Ali Baabbad
Nov 19, 2022, 5:40 PM Fauzi Ash Shidik